ساہیوال ڈویژن میں کپاس کی پیداوار میں گزشتہ سال کے مقابلے میں 23 فیصد اضافہ

کپاس کی اگیتی کاشت کی 4 چنائیوں میں پیداوار 30 سے 32 من فی ایکڑ حاصل ہوئی ہے.

ساہیوال (ساہیوال اپڈیٹس – ڈائریکٹر پبلک ریلیشنز) ساہیوال ڈویژن میں اب تک کپاس کی116734 بیلز جیننگ فیکٹریوں میں پہنچ چکی ہیں جو پچھلے سال اسی عرصے کے دوران پیداوار سے23 فی صد زیادہ ہے۔

کپاس کی اگیتی کاشت کی 4 چنائیوں میں پیداوار 30 سے 32 من فی ایکڑ جبکہ لیٹ کاشت کی اب تک کی 2 چنائیوں سے 10 سے 12 من فی ایکڑ پیداوار حاصل ہوئی ہے۔

یہ بات ڈائریکٹر زراعت چوہدری شہباز اختر نے ڈویژنل کاٹن اسسمنٹ کمیٹی کے اجلاس میں بتائی جس کی صدارت ایڈیشنل کمشنر کوارڈینیشن شفیق احمد ڈوگر نے کی۔

اجلاس میں ڈپٹی کمشنر ساہیوال اکرام الحق، اور پاک پتن امتیاز احمد خان کھچی سمیت متعلقہ محکموں کے افسران اور کاشت کاروں محمد ساجد بھٹی اور عامر حیات بھنڈارہ نے بھی شرکت کی۔

ڈائریکٹر زراعت چوہدری شہباز اختر نے اجلاس میں بتایا کہ حالیہ سیلاب سے ضلع پاکپتن میں ایک ہزار ایکڑ پر کاشت کپاس کی فصل متاثر ہوئی ہے جبکہ باقی فصل کو پانی کی کوئی کمی نہیں آئی۔

انہوں نے مزید بتایا کہ ساہیوال ڈویژن میں پھٹی کا ریٹ 8500 سے 9000 روپے فی من رہا جس سے کسانوں کو بہترین مالی فائدہ حاصل ہوا۔ ایڈیشنل کمشنر کوارڈینیشن شفیق احمد ڈوگر نے کسانوں کے کھاد کی دستیابی کے حوالے سے تحفظات پر محکمہ زراعت کو ہدایت کی کہ وہ کھاد کی فروخت کو سختی سے مانیٹر کریں اور حکومت کو سپلائی بہتر بنانے کے لئے خط لکھیں تاکہ اگلے 3ماہ میں کسانوں کو کھاد کی کمی نہ آنے دی جائے۔

انہوں نے کسانوں کی طرف سے ضروریات سے زیادہ کھاد کی خرید کی حوصلہ شکنی کرنے کی بھی ہدایت کی۔ عامر حیات بھنڈارہ اور محمد ساجد بھٹی نے سیلاب سے متاثرہ علاقوں کو آفت زدہ قرار دینے اور بجلی کے وولٹیج ٹھیک کرنے کی تجاویز دیں جن کی وجہ سے کسانوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

ایڈیشنل کمشنر کوارڈینیشن شفیق احمد ڈوگر نے کیڑے مار ادویات میں ملاوٹ کے خلاف جاری مہم کو بھی کاری رکھنے کی ہدایت کی۔

You might also like
Leave A Reply

Your email address will not be published.